Allama Iqbal


A rare letter of Jinnah shows the importance of Iqbal’s poetry

Is Iqbal relevant today?

What Iqbal was for Jinnah

Imam Hussain [A.S] in Iqbal’s work

Selection from Iqbal’s work:

عکس اس کا مرے آئينہ ادراک ميں ہے

ايسی نماز سے گزر ، ايسے امام سے گزر

کہاں سے تونے اے اقبال سيکھی ہے يہ درويشی

يہی رہا ہے ازل سے قلندروں کا طريق

پانی پانی کر گئی مجھ کو قلندر کی يہ بات

کريں گے اہل نظر تازہ بستياں آباد

تو نے پوچھی ہے امامت کی حقيقت مجھ سے

دلِ مرتضی ، سوزِ صديق دے

اے باد صبا! کملی والے سے جا کہیو پیغام مرا

مسجد تو بنا دی شب بھر میں ایماں کی حرارت والوں نے

خردمندوں سے کيا پوچھوں کہ ميری ابتدا کيا ہے

حضوررسالت مآبﷺ میں

ہر شے مسافر ، ہر چيز راہی

افلاک سے آتا ہے نالوں کا جواب آخر

جب عشق سکھاتا ہے آداب خود آگاہی

طلوع اسلام

خضرراہ [شاعر

اب ذرا دل تھام کر فریاد کی تاثیر دیکھ

مسجد قرطبہ

جو مشکل ہے، تو اس مشکل کو آساں کر کے چھوڑوں گا

سرمہ ہے ميری آنکھ کا خاک مدينہ و نجف

يد بيضا ليے بيٹھے ہيں اپنی آستينوں ميں

ایسا سکوت جس پر تقدیر بھی فدا ہو

لوح بھی تو قلم بھی تو تیرا وجود الکتاب

Leave a comment

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

Blog at WordPress.com.